�تونسہ مسلح ڈاکو ڈکیتی کی ناکام کوشش کے بعد موقع سے فرار حقیقت یا ؟

ونسہ شریف گزشتہ روز دن دھاڑے پونے چار بجے کے قریب دونقاب پوش مسلح ڈاکوؤں نے نیو سبزی منڈی انڈس ھائی وے پر قائم یاسر ٹریڈز میں ڈکیتی کی ناکام کوشش کے بعد موقع سے فرار

حقیقت یا ؟ سی سی ٹی وی ویڈیو میں کلاشنکوف غائب۔ پولیس ترجمان کے مطابق واقع ہوا ہے مزید تفتیش کررہے ہیں


تفصیلات کے مطابق ڈکیت کیشں لوٹنے کیلئے اندر داخل ھونے لگے دوکان مالک محمد بلال نے جہنوں نے مشکوک ڈاکوؤں کو پکڑنے کی کوشش کی ایک فورآ بھاگ گیا جبکہ دوسرا ڈاکو بلال کے ساتھ گتھم گتھا ہو گیا بعد میں بلال کے اوپر کلاشنکوف تان لی کلاشنکوف لہراتا ھوا نکل گیا اور اگے نہر تھی ادھر ان کا ایک اور ساتھی جو 125 ھنڈا موٹر سائیکل پر تھا

دونوں کو بٹھا کر بھاگ گئے اور دوران ڈکیتی لوگو کا رش تھا لیکن ڈاکوؤں کو پکڑنے کیلئے کسی نے جرت نہیں کی اور دوکاندار بلال نے پکڑنے کی کوشش کی جبکہ دوکان مالک یاسر نے 15 پر کال کی اور سٹی پولیس کے سب انسپکٹر محمد اقبال کھوسہ نفری کے ھمراہ فورآ موقع پر پہنچے اور تفتیش شروع کردی

گلی، محلے اور بازاروں میں مسلسل چوری، ڈکیتی پولیس کی ناقص کارکردگی پر مضبوط ؟ ہے۔ “زاہد جاوید ماکلی صدر انجمن تاجران تونسہ” عوام کے جان و مال کی ذمہ داری کس پر؟ ہم تونسہ کے شہری انصاف کہاں تلاش کریں؟ کس دروازے پر دستک دیں؟ تونسہ پولیس اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے میں ناکام…. پولیس عوام میں اپنا اعتماد آہستہ آہستہ کھو رہی ہے۔ چوری اور ڈکیٹی کے مجرموں کا نہ پکڑا جانا پولیس کے ماتھے پر بدنما داغ ہے… ہم تاجر برادری اس کی شدید مذمت کرتے ہیں اور آئی جی پنجاب سے مطالبہ کرتے ہیں کہ تونسہ میں نیک شہرت، ذمہ دار اور فرض شناس پولیس آفیسرز تعینات کریں جو واقعی تھانہ کلچر میں تبدیلی لائیں اور تھانہ کو شریف کے لیے دارالامان اور بدمعاش کے لیے دار الحساب بنائیں۔ جس سے عام شہری اور تاجر برادری سکھ کا سانس لے سکیں

اپنا تبصرہ بھیجیں